Smog may force U-17 World Cup out of Delhi 91

فضائی آلودگی کے باعث انڈر 17 فٹبال ورلڈ کپ کا بھارت میں انعقاد خطرے میں پڑھ گیا

Want create site? Find Free WordPress Themes and plugins.

دہلی (مانیٹرنگ ڈسک) 6 اکتوبر سے شروع ہونے والا انڈر 17 فٹبال ورلڈ کپ بھارت میں ہونا ہے۔ جس کا 2013کے ورلڈ کپ میں فیفا نے اعلان کیا تھا کہ اگلے فٹبال انڈر 17 ورلڈ کپ کا میزبان بھارت ہوسکتا ہے۔ اور فیفا 2017 کا انڈر 17 فٹبال ورلڈ کپ بھارت میں کرواسکتا ہے۔ اگر فیفا اپنے وعدے پر قائم رہا تو ٹورنامنٹ 6 اکتوبر سے نئی دہلی سمیت بھارت کے محتلف 6 شہروں میں منعقد کیا جائے گا۔
انڈر 17 فٹبال ورلڈ کپ میں پوری دنیا سے 23 ٹیمیں شامل ہوں گئی جبکہ بھارت ہوسٹ ملک ہوگا ۔ اس طرح ٹوٹل 24 ٹیمیں ورلڈکپ میں حصہ لیں گی۔
لیکن دوسری جانب بھارتی دارالحکومت دہلی میں فضائی آلودگی دن بدن بڑھتی جا رہی ہے۔ فضائی آلودگی کی خطرناک سطح اور اسموگ کے باعث نئی دہلی میں ہونے والے انڈر 17 ورلڈ کپ کا انعقاد خطرے میں پڑگیا ہے۔ ذرائع کے مطابق فیفا ورلڈ کپ کا مقام کسی وقت بھی تبدیل کر سکتی ہے۔

Smog may force U-17 World Cup out of Delhi

بھارت میں فیفا کے حکام کے مطابق نئی دہلی میں آلودگی کی سطح خطرناک حد تک بلند ہوچکی ہے۔ جب دیوالی کے تہوار میں ملک بھر میں بڑے پیمانے پر آتش بازی کی گئی جس سے فضائی آلودگی میں مزید اضافہ ہوگیا ہے۔
بھارتی فیفا حکام کے مطابق میچ کا حتمی شیڈول فی الحال طے نہیں کیا گیا، تاہم نئی دہلی کی فضائی آلودگی فیفا کے زیر غور ہے۔

مزید پڑھیے- رواں سال2017 میں کون کون سی ٹیمیں پاکستان آنے کے لیئے تیار ہیں۔

اب صورتحال اور بھی تشویش ناک ہے کیونکہ ورلڈ کپ رواں برس اکتوبر میں ہونا ہے اور اسی ماہ دیوالی کا تہوار بھی منایا جائے گا۔ جس سے فضائی آلودگی میں مزید اضافے کا امکان ہے۔ جس سے کھلاڑی بھی محتلف بیماریوں میں مبتلا ہو کتے ہیں۔ واضع رہے کہ عالمی ادارہ صحت ڈبلیو ایچ او کے مطابق بھارت میں ہر سال فضائی آلودگی کے باعث 11 لاکھ افراد موت کے گھاٹ اتر جاتے ہیں۔ چین کے بعد یہ دنیا بھر میں آلودگی کے باعث اموات کی دوسری سب سے بڑی شرح بھارت میں ہے۔

Did you find apk for android? You can find new Free Android Games and apps.
loading...

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں


Parse error: syntax error, unexpected '*' in /home/infomild/tv47.pk/wp-content/themes/upaper/comments.php on line 3